کرنٹ اکاؤنٹ خسارے سے نکل کر 424 ملین ڈالر سرپلس میں چلا گیا ہے. عمران خان

ﻭﺯﯾﺮ ﺍﻋﻈﻢ ﻋﻤﺮﺍﻥ ﺧﺎﻥ نے کہا ہے ﮐﮧ ﺟﻮﻻﺋﯽ ﻣﯿﮟ ﭘﺎﮐﺴﺘﺎﻥ ﮐﺎ ﮐﺮﻧﭧ ﺍﮐﺎﺅﻧﭧ ﺧﺴﺎﺭﮦ ﺧﺘﻢ ﮨﻮﮔﯿﺎ ﮨﮯ جب کہ ﮐﺮﻧﭧ ﺍﮐﺎﺅﻧﭧ 424 ﻣﻠﯿﻦ ﮈﺍﻟﺮ ﺳﺮﭘﻠﺲ ﻣﯿﮟ ﭼﻼ ﮔﯿﺎ ﮨﮯ

وزير اعظم ﻧﮯ ﺳﻤﺎﺟﯽ ﺭﺍﺑﻄﮯ ﮐﯽ ﻭﯾﺐ ﺳﺎﺋﭧ ﭨﻮﺋﭩﺮ ﭘﺮ اپنے ﺍﯾﮏ ﭘﻐﺎﻡ ﻣﯿﮟ ﮐﮩﺎ ﮨﮯ ﮐﮧ ﭘﺎﮐﺴﺘﺎﻥ ﮐﯽ ﻣﻌﯿﺸﺖ ﺩﺭﺳﺖ ﺳﻤﺖ ﻣﯿﮟ جا رہی ﮨﮯ ﺍﻭﺭ ﻣﻠﮏ ﮐﺎ ﮐﺮﻧﭧ ﺍﮐﺎﺅﻧﭧ ﺧﺴﺎﺭﮦ ﮐﻢ ﮨﻮﭼﮑﺎ ﮨﮯ.

ﺍﻧﮩﻮﮞ ﻧﮯ ﻟﮑﮭﺎ ہے ﮐﮧ ﺟﻮﻻﺋﯽ 2019ع ﻣﯿﮟ ﮐﺮﻧﭧ ﺍﮐﺎﺅﻧﭧ ﺧﺴﺎﺭﮦ 613 ﻣﻠﯿﻦ ﮈﺍﻟﺮ جب کہ ﺟﻮﻥ 2020ع ﻣﯿﮟ 100 ﻣﻠﯿﻦ ﮈﺍﻟﺮ تھا، جوﺟﻮﻻﺋﯽ ﻣﯿﮟ ﺧﺘﻢ ہو کر اب ﺳﺮﭘﻠﺲ ﮨﻮﮔﯿﺎ ﮨﮯ.

عمران خان کے مطابق ﻣﻌﯿﺸﺖ ﻣﯿﮟ ﺑﮩﺘﺮﯼ ﮐﯽ ﻭﺟﮧ ﺑﺮﺁﻣﺪﺍﺕ ﻣﯿﮟ ﺍﺿﺎﻓﮧ ﮨﮯ، ﺟﻮﻥ ﮐﮯ ﻣﻘﺎﺑﻠﮯ میں ﺑﺮﺁﻣﺪﺍﺕ ﻣﯿﮟ 20 ﻓﯿﺼﺪ ﺍﺿﺎﻓﮧ ﺭﯾﮑﺎﺭﮈ ﮐﯿﺎ ﮔﯿﺎ ﮨﮯ، جب کہ ﺑﯿﺮﻭﻥ ﻣﻠﮏ ﺳﮯ ﺑﮭﯿﺠﯽ ﮔﺌﯽ ترسیلات ﺯﺭ ﻣﯿﮟ ﺑﮭﯽ ﺭﯾﮑﺎﺭﮈ ﺍﺿﺎﻓﮧ ﮨﻮﺍ ﮨﮯ

ﺍﺳﭩﯿﭧ ﺑﯿﻨﮏ ﮐﮯ ﻣﻄﺎﺑﻖ ﺟﻮﻻﺋﯽ 2020ع ﻣﯿﮟ کرنٹ اکاؤنٹ ﺧﺴﺎﺭﮮ ﺳﮯ ﭘﺎﮎ ﺭﮨﺎ ﺍﻭﺭ ﮐﺮﻧﭧ ﺍﮐﺎﺅﻧﭧ ﺑﯿﻠﻨﺲ 42 ﮐﺮﻭﮌ 40 ﻻﮐﮫ ﮈﺍﻟﺮ
ﺳﺮﭘﻠﺲ ﺭﮨﺎ. ﮔﺰﺷﺘﮧ ﺳﺎﻝ ﺟﻮﻻﺋﯽ ﻣﯿﮟ کرنٹ اکاؤنٹ 61 ﮐﺮﻭﮌ 30 ﻻﮐﮫ ﮈﺍﻟﺮ کے خسارے میں ﺗﮭﺎ.

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Check Also
Close
Back to top button
Close
Close